کشش ثقل ختم ہوگی تو کیا ہوگا؟

0
8

پاکستان ویپ میں خوش آمدید! دوستو اگر آپ ایک دن بیدار ہوں اور پتا چلے کہ کشش ثقل ختم ہو گئی ہے تو آپ کا ردعمل کیا ہوگا؟ آپ سوچیں گے کہ اب آپ خلاباز کی طرح ہوا میں اڑ سکتے ہیں۔ آپ کسی بھی ملک اور جس شہر میں جانا چاہتے ہیں پرواز کر سکتے ہیں لیکن دوستو، حقیقت بالکل پرکشش نہیں ہے۔ آئیے جانتے ہیں کہ ہمارے سیارے اور ہم انسانوں کے ساتھ کیا ہوگا، اور اگر کشش ثقل ختم ہوجائے تو زمین پر کیا تبدیلیاں رونما ہوں گی۔

کشش ثقل ختم ہوگی تو کیا ہوگا؟ | What Would Happen If Gravity Disappeared? | What will happen if gravity ends? | What will happen if gravity ends?

کشش ثقل ختم ہوگی تو کیا ہوگا؟

پہلے ہمیں یہ جاننا ہوگا کہ کشش ثقل کیا ہے یہ بہت عام بات ہے کہ جب ہم کسی چیز کو اوپر اچھالتے ہیں تو وہ واپس نیچے آجاتی ہے۔ اگر ہم اوپر کودتے ہیں تو نیچے بھی گر جاتے ہیں۔ ایسا کیوں ہے ہماری زمین چپٹی نہیں بلکہ گول ہے تو زمین پر موجود تمام اشیاء خلا میں کیوں نہیں آتیں؟ اس سب کی وجہ دراصل ہمارے سیارے زمین کی کشش ثقل ہے جو ہر چیز کو اپنے مرکز کی طرف کھینچتی ہے۔

ہر وہ چیز جس کی کمیت ہوتی ہے اس میں بھی کشش ثقل ہوتی ہے۔ نیوٹن کے مطابق، جتنا بڑا ماس ہوگا، اس کی کشش ثقل اتنی ہی زیادہ ہوگی۔ ہماری زمین کی کشش ثقل بھی اس کی کمیت کی وجہ سے ہے۔ اس لیے یہ اپنے اوپر پائی جانے والی تمام اشیاء کو اپنے مرکز کی طرف کھینچتا ہے۔ ان اجسام کا وزن زمین کے کھینچنے سے طے ہوتا ہے۔

ایک مثال لیں: اگر آپ کسی ایسے سیارے پر چلتے ہیں جس کا وزن ہمارے سیارے زمین سے کم ہے تو اس سیارے پر آپ کا وزن بھی کم ہو جائے گا اور آپ ہلکے ہو جائیں گے۔ ناسا کے مطابق، اگر آپ زمین پر ایک سو پاؤنڈ ہیں، تو آپ چاند پر صرف سترہ پاؤنڈ ہیں۔ مریخ اور عطارد پر آپ کا وزن صرف اڑتیس پاؤنڈ ہوگا۔ چونکہ سورج زمین سے بہت بڑا ہے، اس کی کشش ثقل بھی زمین سے زیادہ ہے اسی لیے سورج نظام شمسی کے تمام سیاروں کو اپنے گرد دائرے میں رکھتا ہے۔ کوئی سیارہ سورج سے جتنا دور ہے،

سورج کی کشش ثقل اس سیارے پر اتنا ہی کم اثر انداز ہوتی ہے۔ دوستو، یہ بات دلچسپ ہے کہ بلیک ہولز کا ماس بہت بڑا ہوتا ہے اس لیے ان کی کشش ثقل بھی بہت زیادہ ہوتی ہے۔ اتنا اونچا کہ بلیک ہولز روشنی کو بھی اپنی طرف کھینچ سکتے ہیں (جو تیز رفتاری سے سفر کرتی ہے)۔ اور انسان بہت دور کی بات ہے، اگر روشنی ایک بار بلیک ہول میں چلی جائے تو کبھی واپس نہیں آسکتی۔ دوستو،

اگر سورج کی کشش ثقل ختم ہو جائے تو تمام سیارے اپنے اپنے راستوں سے ہٹ جائیں گے اور خلا میں موجود دیگر اشیاء سے یا ایک دوسرے سے ٹکرا کر تباہ ہو جائیں گے اور اگر ہمارے سیارے زمین پر کشش ثقل ختم ہو جائے تو زمین پر موجود ہر چیز بے وزن ہو جائے گی۔ کچھ بھی جگہ پر نہیں رہے گا زمین کی کشش ثقل کی وجہ سے چاند اپنے مدار میں زمین کے گرد گھومتا ہے لیکن کشش ثقل ختم ہونے کے بعد چاند بھی اپنے مدار سے نکل کر زمین سے ٹکرائے گا دوستو ایک بار جب کشش ثقل ختم ہو جائے گی، آپ، آپ کی توقعات کے برعکس،

ہوا میں اڑنا شروع نہیں کریں گے، بلکہ ایک گڑبڑ کی طرح ہوا میں گھومنا شروع کر دیں گے۔ نہ صرف آپ بلکہ عمارتیں، کاریں، مکانات، درخت سب ہوا میں ایک دائرے میں گھومنے لگیں گے، کیونکہ زمین اب بھی اپنے مدار کے گرد ایک ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے گھوم رہی ہوگی تو آپ اور دیگر چیزیں گھوم رہی ہوں گی۔ تمام اشیاء اور انسانوں کا خلا میں بکھر جانا بھی ممکن ہے۔

لیکن دوستو یہ کچھ نہیں ہے۔ کشش ثقل کے ختم ہونے سے زمین کا نظام تباہ ہو جائے گا ایک سیکنڈ کے لیے تصور کریں کہ پورا پہاڑ زمین سے الگ ہو کر ہوا میں بکھر گیا ہے۔ کیونکہ کشش ثقل نہیں ہے، اس لیے پہاڑ زمین پر نہیں جم جائیں گے، فضا میں موجود تمام گیسیں خلاء میں اڑ جائیں گی، آکسیجن کی کمی کی وجہ سے جانداروں کے لیے سانس لینا محال ہو جائے گا ، آکسیجن ٹینکوں میں آکسیجن بھی آنا شروع ہو جائے گی۔

جیسے جیسے فضا میں گیسیں ختم ہوں گی سورج کی روشنی براہ راست زمین پر گرنا شروع ہو جائے گی زمین کا درجہ حرارت خطرناک حد تک بڑھ جائے گا دریاؤں اور سمندروں کا پانی بھی بخارات بن کر خلا میں جائے گا۔ اس وقت تک کسی بھی جاندار کا زندہ رہنا ناممکن ہے اگر کوئی انسان زندہ ہوتا تو شاید اس کے کان کے پردے دباؤ میں تبدیلی کی وجہ سے پھٹ گئے ہوں دوستو یہ تمام واقعات کشش ثقل کے خاتمے کے صرف پانچ سیکنڈ کے اندر رونما ہوئے ہوں گے۔

خبر یہ ہے کہ سائنس دانوں کے مطابق زمین کی کشش ثقل کا ختم ہونا ممکن نہیں کیونکہ اگر کوئی جسم موجود ہے تو اس کا کوئی نہ کوئی ماس ضرور ہونا چاہیے اور جس جسم میں کمیت ہے اس میں بھی کشش ثقل ضرور ہونی چاہیے ، اس لیے جس طرح ہر چیز میں کشش ثقل موجود ہے۔ انسانوں میں بھی کشش ثقل ہوتی ہے، حالانکہ یہ بہت نایاب ہے یہ کہنا ناممکن لگتا ہے کہ زمین کی کشش ثقل ختم ہو جائے گی۔

تاہم، زمین کی کشش ثقل کم ہونے کا ایک اچھا موقع ہے دوستو، جیسے جیسے ہم زمین سے دور ہوتے جاتے ہیں، کشش ثقل کا اثر کم ہوتا جاتا ہے، اسی لیے خلا میں کشش ثقل کا اثر تقریباً صفر ہو جاتا ہے۔ آپ سوچ رہے ہوں گے کہ کیا زمین پر کشش ثقل کے بغیر انسانوں کا زندہ رہنا ناممکن ہے، تو خلاباز خلا میں کیسے رہتے ہیں؟ ایک وجہ یہ ہے کہ خلا میں جانے والے خلاباز پہلے سے تیار ہوتے ہیں۔

ان کے پاس ایک خاص قسم کا اسپیس سوٹ ہوتا ہے جو انہیں مختلف تبدیلیوں کے اثرات سے بچاتا ہے۔ آکسیجن ٹینک یا پانی میں آکسیجن سانس لینے کے لیے استعمال ہوتی ہے۔ لیکن پھر بھی ان خلابازوں کو کچھ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے مثال کے طور پر ماہرین کے مطابق خلاباز خلا میں حرکت کرنے کی حس کھو دیتے ہیں انہیں ایسا لگتا ہے

جیسے ان کے بازو اور ٹانگیں جسم سے الگ ہو گئے ہوں بے وزن ہونے کی وجہ سے ان کے پٹھے کمزور ہو جاتے ہیں ہوا کے دباؤ میں تبدیلی ان کی آنکھوں پر اثر انداز ہوتی ہے۔ بعض اوقات خلابازوں کو اپنے اعضاء کو زمین پر واپس منتقل کرنا مشکل ہوتا ہے۔ دوستو یقیناً اب آپ کشش ثقل کی اہمیت کو سمجھ گئے ہیں اس کے بغیر آپ خود کھڑے بھی نہیں رہ سکتے آپ کو آج کا آرٹیکل کیسا لگا ؟ہمیں کمنٹس میں بتائیں۔ شکریہ!

Read More::انسانی دماغ کتنا طاقتور ہے؟

❤️❤️Watch Historical Series English Subtitles And Urdu Subtitle

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here